October 21, 2019

ھراسمنٹ اور بلیک میلنگ کے الزامات پر اینکر سے تفتیش

Image Courtesy: PakistanToday

ایف آئی اے کے سائبر کرائم ونگ نے “سندھ ٹی وی” کے اینکر پرسن ارشاد جاگرانی کو “کے ٹی این” کی خاتون اینکر سحرشاہ رضوی کےآن لائن ھراسمنٹ اور بلیک میلنگ کے الزامات پرگرفتار کیا اور تفتیش کے بعد جانے کی اجازت دے دی۔

میڈیا میڑز فار ڈیموکریسی کے ذرائع کے مطابق ایف ائی اے کے سائبر کرائم ونگ نے سندھ ٹی وی کے دفتر پر چھاپہ مار کر اینکر ارشاد جاگرانی کو سائبر کرائم ایکٹ کے تحت گرفتار کر لیا۔ ان پر “کے ٹی این” کی اینکر سحرشاہ رضوی نے آن لائن ھراسمنٹ اور بلیک میلنگ کے الزامات عائد کئے ھیں۔ خاتون اینکر نے اپنے ایک فیس بک ویڈیو پیغام میں بھی ارشاد جاگرانی پر اسی قسم کے الزامات عائد کئے تھے۔

میڈیا میڑز فار ڈیموکریسی کے ذرائع کے مطابق ارشاد جاگرانی اورسحرشاہ رضوی “سندھ ٹی وی” کے مارننگ شو کی ایک ساتھ میزبانی کر چکے ھیں۔

ایف ائی اے نے ابتدائی تفتیش کے بعد ارشاد جاگرانی کو جانے کی اجازت دے دی ۔ ڈان نیوز کی خبر کے مطابق ایف ائی اے نے ارشاد جاگرانی کا موبائل بھی ضبط کیا اور موبائل ک تفتیش کرنے پر ان کو ارشاد جاگرانی کے خلاف ثبوت بھی ملے۔ تفتتیش پوری ہونے پر ایف ائی اے نے ارشاد جاگرانی کو چھوڑ دیا اور ان کے خلاف قانونی کاروائی جاری رہے گی۔

دوسری طرف صحافتی تنظیموں نے ایف آئی اے کی جانب سے “سندھ ٹی وی” کے دفتر پر چھاپہ کی مذمت کی ہے اور اسے میڈیا پر حملہ قرار دیا ہے۔

Written by

Muhammad Arslan is a journalist and a team member of Media Matters for Democracy. He writes regularly on issues related to media freedom, regulation, and digital rights.

No comments

leave a comment